جب سے ان کی گلی کا گدا ہو گیا

Lyrics to ‘جب سے ان کی گلی کا گدا ہو گیا’:

نعت
جب سے ان کی گلی کا گدا ہو گیا
حق تعالیٰ سے میں آشنا ہو گیا

میں کہاں اور انکی گدائی کہاں
کرم کیسا یہ ربِ عُلیٰ ہو گیا

انکے نوری نگر میں میرا داخلہ
یا الہیٰ یہ کیا معجزہ ہو گیا

سبز گنبد کہاں مجھ سا عاصی کہاں
عقل حیراں ہے کیا ماجرہ ہو گیا

رشک کرنے لگے مجھ پہ حور و ملک
میں تھا کیا اور اب یارو کیا ہو گیا

ان کی چوکھٹ کہاں اور میری جبیں
مجھ سے سر زد یہ کیسا گناہ ہو گیا

نوری جلووں کی تابانیوں میں کہیں
میں تو سارے کا سارا فناہ ہو گیا

ذات میری نہ میرا کوئی نام ہے
میں عکس تھا اصل میں بقا ہو گیا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!