خدا کی خدئی کے اسرار دیکھوں

Lyrics to ‘خدا کی خدئی کے اسرار دیکھوں’:

نعت
خدا کی خدئی کے اسرار دیکھوں
مدینے کی گلیاں و بازار دیکھوں

لبوں پہ سجا کے درودوں کے تحفے
میں روضۂِ اطہر کے انوار دیکھوں

ہیں جسکی زیارت کو آتے ملائک
وہ شہرِ شہنشاہِ ابرار دیکھوں

الہیٰ مجھے بھی دے باطن کی آنکھیں
مکاں لامکاں کا میں سردار دیکھوں

طلب اور بڑھتی ہے دیدہ و دل کی
مدینے کو چاہے میں سو بار دیکھوں

جسے دیکھنے کو مچل اُٹھے قدرت
حبیبِ خدا کا وہ رخسار دیکھوں

فداک اُمی و ابی یا محؐمد
ادب سے پکاروں جو سرکار دیکھوں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!