دلوں کی ہے تسکیں دیارِ مدینہ

Lyrics to ‘دلوں کی ہے تسکیں دیارِ مدینہ’:

نعت
دلوں کی ہے تسکیں دیارِ مدینہ
ہے جنت سے بڑھ کے غبارِ مدینہ

چلو سر کے بل اے میرے ہم سفیرو
کہ دِکھنے لگے ہیں آثارِ مدینہ

یہاں پھول کھل کے بکھرتے نہیں ہیں
خزاں سے مبرا بہارِ مدینہ

فلک جسکی چوٹی پہ بوسہ کناں ہے
ہے کتنا بلند وہ مینارِ مدینہ

اِسے نارِ دوزخ جلائے گی کیسے
ہے محبوؔب بھی خاکسارِ مدینہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!